پاکستان کے حالات پر تارکین وطن کی تشویش ان کی وطن سے گہری محبت کی علامت ہے۔ ڈاکٹر رحیق احمد عباسی

ہزاروں میل دور ہو کر بھی تارکین وطن کا دل پاکستان کے ساتھ دھڑکتا ہے
پاکستان سے جب بھی کوئی بری خبر آتی ہے تارکین وطن کے چہروں کی رونق ختم ہوجاتی ہے
97 فیصد عوام کو تبدیلی کے عمل میں شریک ہونا ہوگا تاکہ 3 فیصد طبقے کے موروثی اقتدار کا خاتمہ ہوسکے
ڈاکٹر رحیق احمد عباسی کی برطانیہ اور یورپ کے تنظیمی دورے اور عمرہ کی ادائیگی سے واپسی پر لاہورایئر پورٹ پرصحافیوں سے گفتگو

تارکین وطن ملک کے حالات پر دل گرفتہ ہیں، ہزاروں میل دور ہو کر بھی ان کا دل پاکستان کے ساتھ دھڑکتا ہے۔ ملک کے ابتر معاشی حالات، دہشت گردی کے واقعات کا تسلسل، مہنگائی، بیروز گاری، معاشی ناہمواری اور سیاسی کھینچا تانی کے باعث مختلف ممالک میں رزق کمانے والے پاکستانی بہت زیادہ دکھی ہیں۔ وہ قانون کی حکمرانی کا خواب دیکھتے ہیں اور ملک کیلئے بہت کچھ کرنا چاہتے ہیں۔ ملک میں قیادت کا بدترین بحران ہے، المیہ یہ ہے کہ جو حقیقی لیڈر ہے وہ اقتدار سے باہر ہے اور جن کے پاس اقتدار ہے وہ قیادت کے اہل نہیں ہیں۔ ان خیالات کا اظہار تحریک منہاج القرآن کے ناظم اعلیٰ ڈاکٹر رحیق احمد عباسی نے ڈیڑھ ماہ کے برطانیہ اور یورپ کے تنظیمی دورے اور عمرہ کی ادائیگی سے واپسی پر لاہور ایئر پورٹ پر صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ جبکہ اس موقع پر سینئر نائب ناظم اعلیٰ شیخ زاہد فیاض، جی ایم ملک، راجہ جمیل اجمل، ساجد بھٹی اور بشیر خان لودھی بھی موجود تھے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان کے حالات پر تارکین وطن کی تشویش ان کی وطن سے گہری محبت کی علامت ہے۔ ان کو اپنی مٹی سے پیار ہے اور یہاں ہونے والے واقعات پر وہ گہری نظر رکھتے ہیں۔ پاکستان سے جب بھی کوئی بری خبر آتی ہے ان کے چہروں کی رونق ختم ہو جاتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ملکی حالات بہت نازک ہیں بیرونی قرض نے ملکی ترقی کو مفلوج کر دیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ملک کو گرداب سے نکالنے کیلئے عوام میں شعوری بیداری کیلئے محنت کرنا بہت ضروری ہے۔ عوام کو ان کے حقوق کا شعور دینا ہوگا تا کہ ملک میں مثبت سیاسی تبدیلی ممکن ہو سکے۔

ڈاکٹر رحیق احمد عباسی نے کہا کہ تحریک منہاج القرآن اندرون اور بیرون ملک مثبت قدروں کے فروغ کیلئے شیخ الاسلام ڈاکٹر طاہرالقادری کی قیادت میں کلیدی کردار ادا کر رہی ہے۔ انہوں نے کہاکہ ملکی سلامتی اور خود مختاری کو لاحق خطرات پر بیرون ملک پاکستانیوں میں گہری تشویش پائی جاتی ہے۔ انہوں نے تحریک منہاج القرآن کے کارکنان پر زور دیا کہ وہ تحصیلی اور ضلعی سطح تک دعوت کے عمل کو تیز کرنے کیلئے اقدامات کریں اور پاکستان کے موجودہ حالات کو بدلنے کیلئے 97 فیصد عوام کو تبدیلی کے عمل میں شریک کریں تاکہ 3 فیصد طبقے کے موروثی اقتدار کا خاتمہ ہوسکے۔

تبصرہ

تلاش

ویڈیو

We Want to CHANGE the Worst System of Pakistan
Presentation MQI websites
Advertise Here
Top