فرید ملّت ریسرچ اِنسٹی ٹیوٹ‘ تعارف اور خدمات

محمد فاروق رانا

فریدِ ملّت رِیسرچ اِنسٹی ٹیوٹ (FMRi) کا باقاعدہ قیام 7 دسمبر 1987ء کو عمل میں لایا گیا۔ اِسے یہ اعزاز حاصل ہے کہ یہ شعبہ براہِ راست مجددِ رواں صدی شیخ الاسلام ڈاکٹر محمد طاہر القادری مد ظلہ العالی کی زیر سرپرستی اور تحریک منہاج القرآن کی سپریم کونسل کے چیئرمین محترم ڈاکٹر حسن محی الدین قادری کی زیر نگرانی فرائض سرانجام دے رہا ہے۔ FMRi کے یومِ تاسیس کی مناسبت سے اِس عظیم علمی و تحقیقی مرکز کا مختصر تعارف اور خدمات نذرِ قارئین ہیں۔

شیخ الاسلام ڈاکٹر محمد طاہر القادری مد ظلہ العالی نے جب اَسّی کی دہائی کے آغاز میں اِصلاحِ اَحوال، اِحیاے اِسلام اور تجدیدِ دین کی عظیم علمی و فکری تحریک منہاج القرآن کا آغاز کیا تو ساتھ ہی مخلوقِ خدا کی رُشد و ہدایت کے لیے بالعموم اور اُمتِ مسلمہ کی رہنمائی کے لیے بالخصوص عصری تقاضوں کے مطابق علمی و تحقیقی کام بھی شروع کر دیا۔ یوں تحریک منہاج القرآن کا یہ طرۂ اِمتیاز ہے کہ یہ اپنے آغاز سے ہی تحریر و تقریر دونوں ذرائع کو بروئے کار لا کر تبلیغِ دین کا فریضہ سرانجام دے رہی ہے۔ حضرت شیخ الاسلام نے سب سے پہلے جس موضوع پر قلم اٹھایا، وہ اَلأَرْبَعِیْن فِي فَضَائِلِ النَّبِيِّ الْأَمِیْن صلی الله علیه وآله وسلم (حضور نبی اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے فضائل و مناقب) کتاب تھی۔ انہوں نے یہ مجموعہ احادیث آج سے تقریبا 47 سال قبل (1972ء میں) جھنگ میں اپنی رہائش گاہ کے قریب واقع مسجد پرانی عیدگاہ میں دورانِ اعتکاف مرتب کیا تھا۔ یہ اُس زمانے کی بات ہے جب آپ پنجاب یونی ورسٹی میں ایم۔ اے علومِ اسلامیہ کے طالب علم تھے اور ہر سال مذکورہ مسجد میں اِعتکاف بیٹھتے تھے۔ لیکن آپ کی جو کتاب سب سے پہلے طبع ہوئی، وہ ’نظامِ مصطفی صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم : ایک اِیمان افروز اِصطلاح‘ تھی۔ یہ کتاب 1978ء میں طبع ہوئی تھی۔ رفتہ رفتہ تحریک کا کام بڑھتا گیا۔ آپ نے شادمان لاہور کی رحمانیہ مسجد میں دروسِ قرآن سے دعوت کے فروغ کا سلسلہ شروع کیا۔ آغاز میں یہ دروسِ قرآن علیحدہ علیحدہ چھپتے رہے، تاہم جامع کتب کی ترتیب و تدوین کا سلسلہ بھی جاری رہا۔

1981ء میں آپ کا پہلا اور باقاعدہ علمی و تحقیقی شاہکار ’تسمیۃ القرآن‘ منظر عام پر آیا۔ 1982ء میں ’سورۂ فاتحہ اور تعمیرِ شخصیت‘ کے علاوہ آپ کی فکر انگیز کتاب ’اسلامی فلسفہ زندگی‘ یکے بعد دیگرے شائع ہوئیں جنہوں نے اَہلِ علم و فکر کے وسیع حلقے کو متاثر کیا۔ 1985ء سے 1987ء تک آپ کی کتب ’اَرکانِ ایمان‘، ’فرقہ پرستی کا خاتمہ کیونکر ممکن ہے؟‘، ’ایمان اور اسلام‘ اور متعدد انگریزی کتابچے زیورِ طبع سے آراستہ ہوئے۔ اِس دوران میں شیخ الاسلام ڈاکٹر محمد طاہر القادری مد ظلہ العالی کے خطبات، دروس اور لیکچرز کا سلسلہ بھی کافی وسیع ہوچکا تھا۔ اِس تمام علمی و تحقیقی اور فکری مواد کی اِشاعت کے لیے بانیِ تحریک کی زیرِ نگرانی مؤرّخہ 7 دسمبر 1987ء کو منہاج القرآن رائٹرز پینل کی بنیاد رکھی گئی۔ اس علمی و تحقیقی مرکز کو بانی تحریک کے والدِ گرامی حضرت ڈاکٹر فرید الدین قادری رَحِمَہُ اﷲ سے موسوم کیا گیا۔ اس وقت یہ شعبہ تحریک منہاج القرآن کی سپریم کونسل کے چیئرمین محترم ڈاکٹر حسن محی الدین قادری کی نگرانی میں انتہائی مستعدی سے اپنے اَہداف کے حصول کی جانب گامزن ہے۔

مقاصدِ قیام:

فریدِ ملّت رِیسرچ اِنسٹی ٹیوٹ (FMRi) کے قیام کے درج ذیل مقاصد ہیں، جو اِس پلیٹ فارم کی بلند سوچ اور وسعتِ ظرف کے عکاس ہیں:

  • اَمن و اِعتدال اور جدتِ فکر پر مبنی اِسلام کے حقیقی پیغام کی تبلیغ و اِشاعت
  • تحریکِ منہاجُ القرآن کی فکر کی ترویج
  • نئی نسل کو بے یقینی، اَخلاقی زوال اور اَغیار کی ذہنی غلامی سے نجات دلانے کے لیے اِسلامی تعلیمات کی جدید ضروریات کے مطابق اِشاعت
  • مذہبی اَذہان کو علم کے میدان میں ہونے والی جدید تحقیقات سے روشناس کرانا
  • راہِ حق سے بھٹکے ہوئے مسلمانوں کو اپنا صحیح ملی تشخص باوَر کرانا
  • مسلم اُمّہ کو درپیش مسائل کا مناسب حل تلاش کرنا
  • نوجوان نسل کو دین کی طرف راغب کرنا
  • تحریکِ منہاجُ القرآن سے وابستہ اَفراد کی علمی و فکری تربیت کا نظام وضع کرنا اور تربیتی نصاب مدوّن کرنا
  • تحریکِ منہاجُ القرآن سے وابستہ اَہلِ قلم کو مجتمع کرنا اور ان کی صلاحیتوں کو تحریک کے پلیٹ فارم پر جہاد بالقلم کے لیے بروئے کار لانا
  • ملکی و بین الاقوامی سطح پر اَہلِ قلم تک تحریک کی دعوت بذریعہ قلم پہنچانا اور اُنہیں مصطفوی مشن کے اِس پلیٹ فارم پر جمع کرنا
  • اَساسی و فکری نوعیت کے موضوعات پر مضامین اور تحقیقی مقالات تیار کرنا اور ذرائع اَبلاغ کے ذریعے انہیں شائع کروانا
  • علمی و فکری موضوعات پر کتب تصنیف کرتے ہوئے علمی و تحقیقی اور روحانی و تربیتی ضروریات کو پورا کرنا
  • قائد تحریک کے مختلف دینی، سماجی، اقتصادی، سیاسی و سائنسی، اور اخلاقی و روحانی موضوعات پر فکر انگیز اور اِیمان اَفروز خطابات کو کتابی صورت میں مرتب کروانا
  • جدید اُسلوبِ تحقیق اور عصری تقاضوں کے مطابق اسلامی ورثہ کو نسلِ نو کی طرف منتقل کرنا

شعبہ جاتی اِرتقاء اور کارکردگی:

ابتداءً جب شعبہ تحقیق و تدوین قائم ہوا تو اس میں کچھ عرصہ کے لیے جامعہ اِسلامیہ منہاج القرآن (شریعہ کالج) کے اساتذہ کرام نے جز وقتی خدمات سرانجام دیں۔ بعدازاں جامعہ اسلامیہ منہاج القرآن کے فضلاء میں سے اَعلیٰ صلاحیتوں کے حامل اَفراد کی باقاعدہ تقرری عمل میں لائی گئی۔

1988ء کا سال تحریک منہاج القرآن کی ملک گیر شہرت اور بیرون ملک سرگرمیوں میں اِنقلابی پیش رفت کا سال تھا۔ چنانچہ اِسی سال فریدِ ملّت رِیسرچ اِنسٹی ٹیوٹ کے درج ذیل شعبہ جات بھی قائم ہوئے:

  1. لائبریری
  2. شعبہ نقل نویسی
  3. شعبہ تحقیق و تدوین
  4. شعبہ تراجم
  5. شعبہ کتابت و ڈیزائننگ

2000ء میں فریدِ ملّت رِیسرچ اِنسٹی ٹیوٹ کو مزید وسعت دی گئی اور اسے لائبریری سمیت مرکزی سیکرٹریٹ کی مرکزی عمارت سے باہر جامع مسجد منہاج القرآن کی بیسمنٹ یعنی صفہ بلاک میں منتقل کر دیا گیا جہاں ایک شاندار لائبریری ہال اور درج ذیل شعبہ جات کا اضافہ ہوا:

  1. شعبہ کمپوزنگ
  2. شعبہ انفارمیشن ٹیکنالوجی
  3. شعبہ ادبیات
  4. شعبہ ترتیب و تدوین

اِنسٹی ٹیوٹ کی یہاں منتقلی کے بعد حسب گنجائش مختلف شعبوں میں مزید افراد کی خدمات بھی حاصل کی گئیں۔

عصرِ حاضر کے ماحولیاتی اور تکنیکی تقاضوں کے پیشِ نظر فریدِ ملّت رِیسرچ اِنسٹی ٹیوٹ (FMRi) کی عمارت کو بھی جدید اُصولوں کے مطابق renovate کیا گیا ہے۔ 2016ء اور 2017ء میں بانیِ تحریک شیخ الاسلام ڈاکٹر محمد طاہر القادری اور چیئرمین سپریم کونسل ڈاکٹر حسن محی الدین قادری صاحب کی خصوصی دل چسپی اور ہدایات کے مطابق FMRi کے تحقیقی یونٹ اور لائبریری کو state of the art خطوط پر استوار کرتے ہوئے purpose-built campus تعمیر کیا گیا۔ اس سارے کام کا سہرا تحریک منہاج القرآن کے ناظم اَعلیٰ محترم خرم نواز گنڈا پور کے سرجاتا ہے، جنہوں نے ایک ایک گوشے اور کونے پر بھی توجہ مرکوز رکھی اور اِس طرح فنِ تعمیر کا انتہائی شاندار اور اچھوتا شاہ کار پایہ تکمیل کو پہنچا۔

فریدِ ملّت رِیسرچ اِنسٹی ٹیوٹ (FMRi) کو یہ اِعزاز حاصل ہے کہ اِس میں تمام مراحلِ تحقیق و تدوین، تیاریِ مواد، کمپوزنگ، پروف ریڈنگ، حوالہ جات کی تخریج، لے آؤٹ ڈیزائننگ، ٹائپ سیٹنگ، ٹائٹل وغیرہ ایک ہی چھت تلے مکمل کیے جاتے ہیں۔ اِس عظیم علمی و تحقیقی مرکز کے ذیلی شعبہ جات کا مختصر تعارف درج ذیل ہے:

1۔ شعبہ تحقیق و تدوین:

1988ء میں قائم ہونے والے شعبہ جات میں یہ شعبہ سرفہرست تھا۔ FMRi کے زیرِ اِہتمام شائع ہونے والی کتب میں تحقیق و تخریج کا معیار ملک بھر کے کسی بھی تحقیقی اِدارے کے مقابلے میں معیاری، وقیع اور مستند ہوتا ہے۔ اِس شعبہ کی اَعلیٰ کارکردگی کی بدولت تحریکِ منہاجُ القرآن کی علمی خدمات کو ملک کے علمی حلقوں میں اِنتہائی قدر کی نگاہ سے دیکھا جاتا ہے۔

شعبہ تحقیق و تدوین کا خواتین و حضرات پر مشتمل مستعد رِیسرچ اسٹاف حضرت شیخ الاسلام مد ظلہ العالی کا عظیم اِنقلابی پیغام اعلیٰ معیاری مطبوعات اور انٹرنیٹ کے ذریعے عام لوگوں تک پہنچانے کے لیے شب و روز پوری دِل جمعی اور تن دہی سے مصروفِ عمل ہے۔ یہ اَمر قابلِ ذکر ہے کہ شیخ الاسلام ڈاکٹر محمد طاہر القادری مد ظلہ العالی کے ہمراہ کینیڈا میں بھی FMRi کے اسکالرز موجود ہیں جو براہِ راست معاونت کی سعادت حاصل کرتے ہیں۔

2۔ لائبریری:

فریدِ ملّت رِیسرچ اِنسٹی ٹیوٹ (FMRi) میں رِیسرچ اسکالرز کے استفادہ کے لیے ایک بہت شاندار اور وسیع لائبریری موجود ہے جس کا شمار ملک پاکستان کی قومی سطح کی عظیم لائبریریز میں ہوتا ہے۔ اس میں قریباً 35 ہزار کتب کا نادر و نایاب ذخیرہ موجود ہے۔ اِس حوالہ جاتی اور تحقیقی مواد پر مشتمل کتب خانہ میں MPhil اور PhD کی سطح کی تحقیق کرنے والے طلباء کے لیے مفید علمی مصادر و مآخذ دستیاب ہیں۔ عالم عرب اور دنیاے مغرب میں اِسلام پر شائع ہونے والی تصانیف اور تحقیقی مواد کو اس لائبریری کے لیے حاصل کرنے کی سعی کی جاتی ہے۔ اِنسٹی ٹیوٹ میں ہونے والے فکری و سنجیدہ تحقیقی کام کی وجہ سے یہ حوالہ جاتی لائبریری نہ صرف شہر لاہور میں منفرد علمی و تحقیقی مقام کی حامل بن چکی ہے بلکہ اِس کا شمار قومی سطح کے چند فعال تحقیقی اداروں میں کیا جا سکتا ہے۔

شیخ الاسلام ڈاکٹر محمد طاہر القادری مد ظلہ العالی کے والد گرامی ڈاکٹر فرید الدین قادری رحمۃ اللہ علیہ کے زیر مطالعہ رہنے والی تمام ذاتی کتب اِس لائبریری میں مکتبہ فریدیہ قادریہ کے نام سے الگ سیکشن میں موجود ہیں۔ مکتبہ فریدیہ قادریہ کی 1,600 کتب کا یہ نایاب ذخیرہ لائبریری ہذا کے قیام کی بنیاد ہے۔ ان کتب کی اہمیت و ندرت کے پیش نظر اس مکتبہ کو archive کا درجہ حاصل ہے۔ مذکورہ مکتبہ میں قرآن و حدیث، سیرتِ طیبہ، فقہ و اُصولِ فقہ، تصوف، طب اور میڈیکل سائنس جیسے کئی موضوعات پر نادِر کتب دستیاب ہیں۔

شیخ الاسلام ڈاکٹر محمد طاہر القادری مد ظلہ العالی عرب و عجم کے کسی بھی ملک جاتے ہیں، تو وہاں کے بڑے بڑے کتب خانوں سے بیش قیمت و نایاب کتب اس لائبریری کے لیے خرید کر لاتے ہیں۔ اس وقت لائبریری میں علم التفسیر و علوم القرآن، علم الحدیث و اصول الحدیث، علم الفقہ واصولہ، سیرتِ طیبہ، تصوف، لغت و ادب، تاریخ، سوانح و اِقبالیات اور دیگر موضوعات پر کتب کا ایک وسیع ذخیرہ موجود ہے۔ لائبریری میں جدید علوم پر بھی کتب کا گراں قدر ذخیرہ موجود ہے جن میں سیکڑوں مضامین پر مختلف النوع کتب پائی جاتی ہیں۔

جدید عصری ضروریات کی تکمیل کے لیے FMRi میں ڈیجیٹل لائبریری کا قیام بھی عمل میں لایا جاچکا ہے، جس میں ہزارہا کتب موجود ہیں۔

3۔ شعبہ ترجمہ:

اِس شعبہ کے ذِمّہ شیخ الاسلام ڈاکٹر محمد طاہر القادری کی تصنیفات کو اردو سے انگریزی اور عربی میں یا اس کے برعکس منتقل کرنا ہے۔ اِس شعبہ میں فاصلاتی اور بیرون ملک مقیم مترجمین بھی اپنی اپنی اِستعداد کے مطابق خدمات سرانجام دیتے ہیں۔

حضرت شیخ الاسلام کی تصانیف کا عربی اور انگریزی زبانوں میں تراجم کے علاوہ دیگر علاقائی اور بین الاقوامی زبانوں میں ترجمہ کا کام بھی جاری ہے۔ آپ کی تصانیف کا ہندی، سندھی اور پشتو کے ساتھ ساتھ جرمن (German)، فرانسیسی (French)، نارویجن (Norwegian)، ہسپانوی (Spanish)، ڈینش (Danish)، ملایالم (Malayalam)، انڈونیشین (Bahasa Indonesia)، ہندی، بنگالی، فارسی اور ترکی زبانوں میں بھی ترجمہ ہو رہا ہے۔

حضرت شیخ الاسلام کا ترجمہ قرآن ’عرفان القرآن‘ کا دنیا کی دس زبانوں میں ترجمہ ہو چکا ہے۔ تفسیری شان کا حامل یہ جدید ترین ترجمہ قرآن دنیا کی سات زبانوں یعنی اردو، انگریزی، یونانی (Greek)، فنش (Finland)، نارویجن (Norwegian)، ہندی اور سندھی میں طبع ہوچکا ہے، جب کہ فرانسیسی (French)، ڈینش (Danish) اور بنگالی ترجمہ تکمیلی مراحل میں ہے۔

اسی طرح عصر حاضر کے تقاضوں کے مطابق تیار کیا گیا مختصر مجموعہ احادیث - المنہاج السوی من الحدیث النبوی - چار زبانوں یعنی اردو، انگریزی، ہندی اور سندھی میں طبع ہوچکا ہے۔

دہشت گردی اور فتنہ خوارج کے خلاف آپ کا مبسوط تاریخی فتویٰ کا ترجمہ بھی تیرہ زبانوں میں ہو چکا ہے۔ ان میں سے آٹھ زبانوں میں چھپ چکا ہے جب کہ پانچ زبانوں میں زیر طبع ہے۔

علاوہ ازیں 45 کتب کا بنگالی زبان میں جب کہ درجنوں کتب کا بھارت کی علاقائی زبانوں میں ترجمہ چھپ چکا ہے۔

دنیا بھر میں جہاں جہاں شیخ الاسلام ڈاکٹر محمد طاہر القادری کی کتب کے تراجم کا کام ہورہا ہے، یہ شعبہ وہاں اپنی خدمات اور تکنیکی معاونت بھی فراہم کرتا ہے۔

4۔ شعبہ انفارمیشن ٹیکنالوجی:

فریدِ ملّت رِیسرچ اِنسٹی ٹیوٹ میں تمام اسکالرز جدید ترین تحقیقی ذرائع و وسائل کو بروئے کار لا کر اپنے تحقیقی اُمور تیزی سے مکمل کرتے ہیں۔ اِنسٹی ٹیوٹ کے ریفرنس سیکشن میں موجود ہزاروں ڈیجیٹل کتب پر مشتمل ذخیرہ کو update کرنا اور شعبہ منہاج انٹرنیٹ بیورو (MIB) کے تعاون سے حضرت شیخ الاسلام کی اُردو، عربی اور انگریزی تصانیف مختلف صورتوں (تصویری روپ، یونی کوڈ، پی۔ ڈی۔ ایف) میں آن لائن مطالعہ کے لیے minhajbooks.com پر شائع کرنا اِسی شعبہ کا کام ہے۔

5۔ شعبہ نقل نویسی:

حضرت شیخ الاسلام کے کم و بیش چھ ہزار خطابات اور لیکچرز و دروس اسلام کے ہر موضوع جیسے قرآن و حدیث، سیرۃ الرسول صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم ، فقہ و اُصولِ فقہ، روحانیات، تصوف، عقائد، اخلاقیات، فلسفہ، فکریات، اِلٰہیات، سیاست (قومی و بین الاقوامی)، عمرانیات، معاشیات، ثقافت، سائنس، میڈیکل سائنس، حیاتیات، فلکیات، اِمبریالوجی اور پیراسائیکالوجی وغیرہ پر موجود ہیں، جوکہ ملک پاکستان اور بیرونی دنیا میں وقتاً فوقتاً دیے جاتے ہیں۔ یہ لیکچرز آن لائن مختلف ویب سائٹس اور سوشل میڈیا پر دستیاب ہیں۔ اس شعبہ میں اس سمعی و بصری مواد کو سن کر من و عن کمپوز کر لیا جاتا ہے۔ فوری حوالہ کے لیے لیکچرز کے اہم نکات و اقتباسات اخذ کیے جاتے ہیں۔ یہ شعبہ لیکچرز کو ترتیب و تدوین کے لیے تیار کرتا ہے۔

6۔ دار الافتاء:

عامۃ الناس کو دین کے بارے میں بنیادی معلومات اور روز مرہ زندگی میں پیش آمدہ مسائل کا عصری تقاضوں کے مطابق حل قرآن و سنت کی روشنی میں فراہم کرنے کے لیے دارُ الافتاء کا اہم شعبہ قائم کیا گیا ہے۔ اس کے سربراہ صدر دار الافتاء محترم مفتی عبد القیوم خان ہزاروی ہیں۔ مفتی صاحب کے فتاویٰ کو بعد ازاں کتابی شکل دی جاتی ہے اور منہاج الفتاویٰ کے نام سے پانچ ضخیم جلدوں میں چھپ چکا ہے۔ یہ فتاویٰ حسبِ ضرورت و اہمیت ماہنامہ منہاج القرآن میں بھی شامل اشاعت کیے جاتے ہیں۔ شعبہ ہٰذا میں اندرون و بیرون ملک سے سائلین خطوط، ٹیلیفون اور انٹرنیٹ کے ذریعے اپنے مسائل کا حل معلوم کرتے ہیں۔یہ شعبہ آن لائن فتویٰ کی سہولت بھی فراہم کرتا ہے۔ www.thefatwa.com نامی ویب سائٹ پر لوگ اپنے سوالات رجسٹر کراتے ہیں، جن کا جواب باری آنے پر ویب سائٹ پر نشر کیا جاتا اور سائل کو بذریعہ ای میل مطلع کر دیا جاتا ہے۔

7۔ شعبہ تحقیقی تربیت:

فریدِ ملّت رِیسرچ اِنسٹی ٹیوٹ میں جدید اُسلوبِ تحقیق اور عصری تقاضوں کے مطابق اسلامی ورثہ کو نسلِ نو کی طرف منتقل کرنے کے لیے سنجیدہ طبع اور تحقیق کے شائق افراد کی تربیت کا اہتمام بھی کیا جاتا ہے۔

شعبہ تحقیق و تدوین میں تحقیقی تربیت حاصل کرنے کے لیے بھی متلاشیانِ علم آتے ہیں۔ اس شعبہ میں زیادہ تر کالج آف شریعہ اینڈ اسلامک اسٹڈیز کی منتہی کلاسوں کے طلباء اور MPhil اور PhD کے سکالرز آتے ہیں، جنہیں جدید خطوط پر تحقیق و تدوین کی تربیت دی جاتی ہے۔ بعد ازاں یہ زیر تربیت اسکالرز فریدِ ملّت رِیسرچ اِنسٹی ٹیوٹ میں ہی مستقل بنیادوں پر خدمات سرانجام دیتے ہیں یا حسب توفیق کسی اور مقام پر خدمت دین میں مصروف ہوجاتے ہیں۔ نیز اندرون و بیرون ملک سے MPhil اور PhD اسکالرز بھی اپنے موضوعات سے متعلق رہنمائی اور تحقیقی مواد کے حصول کے لیے آتے ہیں۔

8۔ FMRi کا شعبہ خواتین:

شیخ الاسلام نے دیگر میادین کی طرح علمی اور تحقیقی میدان میں بھی خواتین کو اپنی خدمات سرانجام دینے کے یکساں مواقع فراہم کیے ہیں۔ آپ نے فرید ملت ریسرچ انسٹیٹیوٹ میں 15 اکتوبر 2004ء کو باضابطہ طور پر ویمن ریسرچ اسکالرز کے شعبہ کا افتتاح کیا تاکہ تحقیقی شغف رکھنے والی خواتین، فاضلات اور اسکالرز عامۃ الناس کے فکری ارتقاء کو بحال کرنے کے لیے آپ کے علمی و فکری کام کو آسان، سلیس،منظم اور جامع انداز میں مرتب کر سکیں۔ اسی سلسلہ میں شیخ الاسلام کی زیرِ سرپرستی شعبہ خواتین عصرِ حاضر میں عقیدہ و عمل میں اصلاح و پختگی کے لیے بیش بہا سمعی و بصری ذرائع علم کے ساتھ جدید سے جدید تر وسائل اختیار کرتے ہوئے سلسلہ تعلیماتِ اسلام کی صورت میں دعوتی اور تربیتی لٹریچر فراہم کر رہا ہے۔ اس شعبہ میں کام کرنے والی خواتین اسکالرز انگلش اور اردو میں یکساں مہارت رکھتی ہیں۔

سلسلہ تعلیماتِ اسلام کے ہر پراجیکٹ کو شروع کرنے سے پہلے حضرت شیخ الاسلام سے اس کی باضابطہ منظوری لی جاتی ہے۔ اس کے بعد آپ کے خطابات، کتب، ملفوظات اور افادات کو سوالاً جواباً تحریر کے قالب میں ڈھالا جاتا ہے، مسودات کی کمپوزنگ کی جاتی ہے، آیات و احادیث اور دیگر اقتباسات کی تخریج کر کے اصل متون سے موازنہ کیا جاتا ہے۔ ویمن اسکالرز کی طرف سے کام مکمل ہونے کے بعد مختلف مراحل میں چیک ہوتا ہے۔ فقہ سے متعلقہ کام دار الافتاء میں ریویو ہوتا ہے۔ پھر پراجیکٹ کو شیخ الاسلام کے behalf پر FMRi کی ریسرچ ریویو کمیٹی نہایت باریک بینی سے چیک کرتی ہے۔ بعد ازاں ضروری ترامیم، اصلاحات اور منظوری کے بعد کتاب کا ٹائٹل فائنل کیا جاتا ہے اور کتاب چھپنے کے لیے پریس میں بھیج دی جاتی ہے۔

بحمدہ تعالیٰ! فرید ملت ریسرچ انسٹی ٹیوٹ میں خواتین اسکالرز بہت محنت، لگن اور عرق ریزی سے شیخ الاسلام کے علمی و تحقیقی اور فکری ورثہ کو سوالاً جواباً کتب کی صورت میں نئی نسلوں تک منتقل کرنے کا اہم فریضہ سرانجام دے رہی ہیں۔ اِسلامی تعلیمات کی جدید ضروریات کے مطابق اب تک اس شعبہ کے تحت درج ذیل کتب منظرِ عام پر آ چکی ہیں:

  1. تعلیماتِ اسلام
  2. اسلام
  3. ایمان
  4. احسان
  5. طہارت اور نماز
  6. روزہ اور اعتکاف
  7. حج اور عمرہ
  8. زکوٰۃ اور صدقات
  9. نکاح اور طلاق
  10. بچوں کی پرورش اور والدین کا کردار (رحمِ مادر سے ایک سال کی عمر تک)
  11. بچوں کی تعلیم و تربیت اور والدین کا کردار (2سے 10 سال کی عمر تک)
  12. بچوں کی تعمیرِ شخصیت (11 سے 16 سال کی عمر تک)
  13. حسن اعمال
  14. پاکستان کا نظام تعلیم، تشدد کے رحجانات اور مدارس دینیہ (ایک تحقیقی جائزہ)
  15. مقالات عصریہ (جدید تحقیقی مباحث)

FMRi کے شعبہ خواتین اور منہاج القرآن ویمن لیگ کے باہمی اشتراک سے تنظیمات کے لیے بالخصوص اور عامۃ الناس کے لیے بالعموم درج ذیل کتب تیار کی گئی ہیں:

  1. دروسِ قرآن: قرآن اور صاحبِ قرآن صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم سے تعلق کی پختگی
  2. حلقہ درود و فکر: روحانی بالیدگی اور اِصلاحِ اَحوال کا ذریعہ
  3. حَیَّ عَلَی الْفَلَاح: آؤ کامیابی کی طرف
  4. راہ نماے دعوت: جادۂ حق کے مسافروں کا راہِ عمل
  5. تربیتی پلان: خود آگہی کا سفر
  6. راہ نمائے تنظیم: مصطفوی کارکنان کا زادِ سفر

اکتوبر 2004ء میں سلسلہ تعلیماتِ اسلام کی پہلی میٹنگ میں حضرت شیخ الاسلام نے فرمایا تھا کہ اِن شاء اللہ یہ کتب بطور نصاب پڑھائی جائیں گی۔ الحمد للہ! آپ کے فرمان کے مطابق اس وقت مذکورہ بالا کتب اندرون اور بیرون ملک بطور نصاب مختلف کورسز میں پڑھائی جا رہی ہیں اور ان کے ذریعے ہزارہا افراد آپ کی فکر سے استفادہ کر چکے ہیں۔ یہ سب صرف شیخ الاسلام کی تبحرِ علمی اور علم دوستی کا مرہونِ منت ہے۔

9۔ دیگر شعبہ جات:

FMRi کے جملہ شعبہ جات کے تفصیلی تعارف کے لیے سیکڑوں صفحات درکار ہیں۔ اِختصار کے پیش نظر ذیل میں بقیہ شعبہ جات کے صرف نام درج کیے جارہے ہیں۔ علم و تحقیق سے وابستہ ہر شخص اِن شعبہ جات کے نام سے ہی ان کے کام، ذِمہ داریوں اور اہمیت سے آگاہ ہوگا:

  1. رِیسرچ رِیویو کمیٹی
  2. شعبہ کمپوزنگ
  3. شعبہ خطاطی
  4. شعبہ مسودات
  5. شعبہ ادبیات
  6. شعبہ ترتیب و تدوین

شیخ الاسلام کا اِظہارِ خیال:

شیخ الاسلام ڈاکٹر محمد طاہر القادری اس عظیم مرکز تحقیق کی اہمیت و انفرادیت کو ان الفاظ میں بیان فرماتے ہیں:

’’اِسلام کے تصورِ اِعتدال و توازن، تحمل و برداشت، اَمن و محبت اور بین المسالک ہم آہنگی و بین المذاہب رواداری کے متنوع موضوعات پر جتنا کام ہورہا ہے، اس سارے کام میں کلیدی کردار تحریک منہاج القران کے مرکز پر قائم فریدِ ملّت رِیسرچ اِنسٹی ٹیوٹ (FMRi) کا ہے۔ اِن تعلیمات کے فروغ میں اِس مرکزِ تحقیق کی خدمات کا الفاظ میں اِحاطہ کرنا بڑا مشکل ہے۔ FMRi میں تقریباً پچاس کے قریب ریسرچ آفیسرز، ریسرچ اسکالرز، ریسرچ اسسٹنٹس ہیں اور تحقیقی پراجیکٹس کی علمی و تکنیکی ضروریات کے لیے کمپوزرز اور لائبریرینز ہیں۔ اس کی وسیع لائبریری ہے جسے آپ پاکستان کی قومی سطح کی عظیم لائبریریز میں شمار کر سکتے ہیں۔

الحمد ﷲ! اب تک میں نے ایک ہزار کے قریب کتب پر تصنیف و تالیف کا کام مکمل کیا ہے، جن میں سے پانچ سو سے زائد کتب چھپ گئی ہیں۔ میری طرف سے کام مکمل ہونے کے بعد طبع ہونے سے پہلے تک کے تمام درمیانی مراحل اِس رِیسرچ اِنسٹی ٹیوٹ میں مکمل ہوتے ہیں۔ یہاں کتب کی کمپوزنگ، پروف ریڈنگ، تحقیق و تخریج اور آخر میں review ہوتا ہے۔ عربی و انگلش میں ہونے والے جملہ تحقیقی کاموں کا دوسری زبانوں میں ترجمہ بھی یہیں ہوتا ہے۔

FMRi میں عصری و فکری تقاضوں کے پیشِ نظر ہر قسم کے موضوعات پر کام ہورہا ہے؛ یعنی بین المذاہب ہم آہنگی، نوجوان نسل کی فکری و نظریاتی رہنمائی اور اِصلاحِ اَحوال و اِعتقادی درستگی کے لیے بھی بنیادی مواد اور ایک عظیم خزانۂ علم تیار ہوتا ہے۔ حتیٰ کہ لوگوں کے اَخلاق درست کرکے انہیں نہ صرف اچھا مسلمان بلکہ مفید انسان بنانے کے لیے تحریری مواد کی تیاری بھی اِسی شعبے میں کی جاتی ہے تاکہ اِن کتب کو پڑھ کر وہ سوسائٹی میں بھرپور contribute کر سکیں، اِنسانیت کے ساتھ محبت کو فروغ دے سکیں، ضرورت مندوں کے ساتھ پیار کرنے کو عبادت کا تصور دے سکیں اور قدم قدم پر نوجوان نسل اور رہنمائی کے طالب لوگوں کی رہنمائی کر کے منزلِ مقصود کا شعور بھی دیں، صحیح راستے پر بھی چلائیں اور منزل تک بھی پہنچائیں۔ علمی و فکری، اِعتقادی و نظریاتی اور تحقیقی و روحانی اعتبار سے بھی اِصلاح کریں۔ جتنا کام اِن جہات پر ہو رہا ہے، اس سارے کام کا مرکز و محور تحریک منہاج القرآن کا یہ شعبہ فریدِ ملّتؒ رِیسرچ اِنسٹی ٹیوٹ (FMRi) ہے۔‘‘

مطبوعاتِ FMRi:

بحمدہ تعالیٰ تمام شعبہ جات کے باہمی اِشتراک اور تعاون سے اِس وقت تک FMRi کے زیراہتمام قائد تحریک شیخ الاسلام ڈاکٹر محمد طاہر القادری کی مختلف موضوعات پر 596 کتب تحقیق و تدوین کے مراحل سے گزر کر اُردو، عربی اور اَنگریزی زبان میں منظر عام پر آچکی ہیں۔ یہ شیخ الاسلام ڈاکٹر محمد طاہر القادری کا اعجاز اور معنوی کرامت ہے کہ اِس وقت تک اُردو، عربی اور انگریزی میں ان کی 596 کتب طبع ہو کر منظر عام پر آچکی ہیں۔ ان کتب کے صفحات سوا لاکھ (1,25,000) سے زائد ہیں۔ چیئرمین سپریم کونسل محترم ڈاکٹر حسن محی الدین قادری اور صدر تحریک منہاج القرآن محترم ڈاکٹر حسین محی الدین قادری کی متعدد کتب الگ طبع ہوچکی ہیں۔ اُردو کتب کے عربی، اَنگریزی و دیگر زبانوں میں تراجم کا کام بھی اس کے ساتھ ساتھ جاری ہے۔ علاوہ ازیں دنیا بھر میں پھیلے ہوئے تحریکی نیٹ وَرک سے وابستہ کارکنان اپنی مقامی زبانوں میں بھی یہ کتب شائع کرانے میں مصروف ہیں اور انہیں بھی FMRi تکنیکی و تحقیقی معاونت فراہم کرتا ہے۔

اب تک اس اِنسٹی ٹیوٹ میں جن موضوعات پر تحقیقی کام ہوا ان کی وضاحت اس گوشوارے سے بخوبی ہوتی ہے:

نمبر شمار

موضوعات

تعداد مطبوعات

1 القرآن و علوم القرآن 47
2 الحدیث 137
3 اِیمانیات و عبادات 23
4 اِعتقادیات (اُصول و فروع) 34
5 سیرت و فضائلِ نبوی صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم 56
6 ختم نبوت و تقابلِ اَدیان 7
7 فقہیات 16
/8 اَخلاق و تصوف 23
9 اَوراد و وظائف 15
10 اِقتصادیات 10
11 فکریات 59
12 دستوریات و قانونیات 11
13 شخصیات 33
14 اِسلام اور سائنس 5
15 اَمن و محبت اور ردّ تشدد و اِرباب 19
16 حقوقِ انسانی اور عصریات 7
17 سلسلہ تعلیماتِ اِسلام 12
18 English Book 82

کل تعداد

596

شیخ الاسلام کا سارا تحقیقی اور فکری کام ان کی طرف سے سے مکمل ہو جانے کے بعد اس کی کمپوزنگ، پروف ریڈنگ، فٹ نوٹ اور حوالہ جات کی تخریج، عربی کام کا ترجمہ الغرض طباعت تک کے تمام مراحل اِس رِیسرچ اِنسٹی ٹیوٹ میں ہی مکمل ہوتے ہیں۔

فروغِ اَمن اور اِنسدادِ دہشت گردی کا اِسلامی نصاب:

آج تحریکِ منہاجُ القرآن دنیا کے 90 سے زائد ممالک میں اِسلام کا آفاقی پیغامِ اَمن و سلامتی عام کرنے لیے مصروفِ عمل ہے۔ بانی تحریک حضرت شیخ الاسلام ڈاکٹر محمد طاہر القادری مدظلہ العالی کو عالمی سطح پر اَمن کے سفیر کے طور پر پہچانا جاتا ہے؛ جب کہ بہبودِ اِنسانی کے لیے آپ کی علمی و فکری اور سماجی و فلاحی خدمات کا بین الاقوامی سطح پر اِعتراف بھی کیا گیا ہے۔

دہشت گردی اور فتنہ خوارج کے خلاف آپ کا مبسوط تاریخی فتویٰ دنیا بھر میں قبولِ عام حاصل کر چکا ہے جسے دنیا بھر کے محققین نے سراہا ہے۔ عالم اسلام کے سب سے بڑے تحقیقی ادارے مجمع البحوث الاسلامیۃ (قاہرہ، مصر) نے بھی اس کے مشتملات کی تائید کی ہے اور اس پر مفصل تقریظ لکھی ہے۔ آپ کا یہ تاریخی فتویٰ اِس وقت تک اردو، عربی، انگریزی، نارویجن (Norwegian)، فرانسیسی (French)، انڈونیشین (Bahasa Indonesia)، ہندی، اور سندھی زبانوں میں چھپ چکا ہے، جب کہ ڈینش (Danish)، ہسپانوی (Spanish)، ملایالم (Malayalam)، فارسی اور ترکی زبانوں میں بھی جلد شائع ہوگا۔

حضرت شیخ الاسلام نے اسلام کا امن، اعتدال، توازن، رواداری، برداشت، محبت اور بین المسالک اور بین المذاہب ہم آہنگی کا چہرہ پوری دنیا میں متعارف کروایا۔ اس سلسلے میں آپ نے فروغِ اَمن اور اِنسدادِ دہشت گردی کے لیے اِسلامی نصاب (Islamic Curriculum on Peace and Counter-Terrorism) مرتب کیا۔ اس سارے کام کی تکمیل میں فریدِ ملّت رِیسرچ اِنسٹی ٹیوٹ نے بنیادی کردار ادا کیا ہے۔ اِس نصاب میں:

اردو، انگریزی اور عربی میں کل 10 کتب بطور متن ہیں، جب کہ 36 کتب اِس نصاب کے فہم اور واضحیت کے لیے تفصیلی و تائیدی مواد کی حیثیت رکھتی ہیں۔ اِن جملہ 46 کتب میں سے 24 کتب اُردو میں، 19 کتب انگریزی میں اور 3 کتب عربی زبان میں ہیں۔ بطور متن کتب درج ذیل ہیں:

  1. فروغِ اَمن اور اِنسدادِ دہشت گردی کا اِسلامی نصاب: ریاستی سکیورٹی اِداروں کے افسروں اور جوانوں کے لیے
  2. فروغِ اَمن اور اِنسدادِ دہشت گردی کا اِسلامی نصاب: اَئمہ، خطباء اور علماء کرام کے لیے
  3. فروغِ اَمن اور اِنسدادِ دہشت گردی کا اِسلامی نصاب: اَساتذہ، وکلاء اور دیگر دانشور طبقات کے لیے
  4. فروغِ اَمن اور اِنسدادِ دہشت گردی کا اِسلامی نصاب: طلبہ و طالبات کے لیے
  5. فروغِ اَمن اور اِنسدادِ دہشت گردی کا اِسلامی نصاب: سول سوسائٹی کے جملہ طبقات کے لیے
  6. المنهج الإسلامي لتعزیر السلام ومکافحة الإرهاب: للأئمة والعلماء والأساتذة الکرام
  7. المنهج الإسلامي لتعزیر السلام ومکافحة الإرهاب: للشّباب والطلبة
  8. Islamic Curriculum on Peace & Counter-Terrorism: For Clerics, Imams and Teachers
  9. Islamic Curriculum on Peace & Counter-Terrorism: For Young People and Students
  10. Islamic Curriculum on Peace & Counter-Terrorism: Further Essential Reading

مجددِ رواں صدی شیخ الاسلام ڈاکٹر محمد طاہر القادری کی سرپرستی میں کام کرنے والے اس مرکز تحقیق کی اسلام کی تعلیمات کے فروغ میں خدمات کا احاطہ الفاظ میں کرنا بڑا مشکل ہے۔ تحریکِ منہاجُ القرآن علمی و فکری، اعتقادی، نظریاتی، تحقیقی اور روحانی جہتوں پر جتنا بھی کام ہو رہا ہے اس سارے کام کا مرکز و محور یہ فرید ملت رِیسرچ اِنسٹی ٹیوٹ ہے۔

ماخوذ از ماہنامہ دخترانِ اسلام، دسمبر 2019ء

تبصرہ

تلاش

ویڈیو

Minhaj TV
Quran Reading Pen
We Want to CHANGE the Worst System of Pakistan
Presentation MQI websites
Advertise Here
Top